سینیٹ الیکشن کیلئے اراکین کی بولی ڈیڑھ ارب تک پہنچ گئی

سینیٹ الیکشن کیلئے اراکین کی بولی ڈیڑھ ارب تک پہنچ گئی

(ڈاکٹر شاہد مسعود)

 Related image

اب بدمعاشیہ نعرے لگائے، ڈانس کرے یا بھنگڑے ڈالے یا چہرے سے جیسا مرضی نظر آنے کی کوشش کرے۔ اب ان پہ قدرت کا کوڑا چل چکا ہے یہ بچ نہیں سکتے۔ میرا اشارہ کسی ایک سیاسی جماعت کی طرف نہیں ہے۔ بلکہ مجموعی طور پر ساری بدمعاشیہ کی طرف ہے۔ ملک کوانتشار کی جانب لے جانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ہو سکتا ہے کہ آنے والے دنوں میں الیکشن کالعدم قرار دےدیے جائیں۔ نوازشریف نے اپنے جلسے میں کہا کہ کیا مجھے آئندہ الیکشن میں اتنے ووٹ دو گے کہ میں آئین میں تبدیلی کروں۔ جو دو بل عدلیہ اور فوج  کے لیے تیار پڑے ہیں، وہ بات نوازشریف کے منہ سے نکل گئی۔

سینیٹ میں جن لوگوں نے عوام کی قسمت کا فیصلہ کرنا ہے، وہاں پر سیٹوں کیلئے بھاؤ تاؤ ہو رہے ہیں۔ یہ لوگ کہتے ہیں کہ ہم سے ہمارے اثاثوں کے بارے میں مت پوچھو۔ مریم نواز کو سیاست کرنے کا شوق ہے اور وہ سیاست میں آ چکی ہیں۔ بلوچستان اسمبلی پیپلزپارٹی کی جیب میں ہےجن کا ایک بھی رکن نہیں۔ جبکہ نوازشریف کے کارکن ہیں لیکن وہ کہتے ہیں ہم ن لیگ کو نہیں مانتے۔

سابق سیکرٹری الیکشن کمیشن کنور دلشاد نے کہا کہ انتخابی اصلاحات کے حوالے سے جب کاغذات نامزدگی کا فیصلہ ہو رہا تھا تو الیکشن کمیشن نے تو اپنے تحفظات کا اظہار کر دیا تھا۔ جب الیکشن کمیشن کے سیکرٹری نے انتخابی اصلاحات کمیٹی کے سامنے اپنا موقف رکھا تو انہیں شٹ اپ کال دی گئی اور کہا گیا کہ یہ آپ کا مینڈیٹ نہیں۔

سیکشن 203 میں ترمیم کے بعد کوئی بھی پارٹی کا سربراہ بن سکتا ہے۔ اسحاق ڈار اور  زاہد حامد نے انتخابی فارم میں سے ملکی و غیرملکی  اثاثوں اور بینک اکاؤنٹس سمیت سب کچھ نکال دیا۔ اسحاق ڈار اب پھر سینیٹ کا الیکشن لڑنے کے لیے پر تول رہے ہیں۔ سینیٹ کیلئے فاٹا کے اراکین کی بولی سب سے زیادہ یعنی  ڈیڑھ ارب تک پہنچ چکی ہے۔ کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے وقت بوریوں میں ڈالر بھر بھر کے لائے جاتے ہیں۔ نوازشریف چاہتے ہیں کے پاکستان فوج کی تعداد کم کی جائے۔

Share This:

Be the first to comment on "سینیٹ الیکشن کیلئے اراکین کی بولی ڈیڑھ ارب تک پہنچ گئی"

Leave a comment

Your email address will not be published.


*